Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

ان کا کہنا ہے

کے اشرف

 

ان کا کہنا ہے

کہ مسکراہٹ میں

 چھپا لوں آنسو

 

ان کا کہنا ہے

کہ  دل کا دکھ

 نہ  زباں تک آنے پاے

 

ان کا کہنا ہے

کہ  پائیز کی بے رحم ہواوں میں

کھلتے ہوے پھولوں کے

ترانے لکھوں

 

ان کا کہنا ہے

برہنہ آنکھوں سے دیکھوں

  تتلیوں کے جھلسے پنکھ

اور

امن کی بات کروں

شہزادوں اور پریوں کے

فسانے لکھوں

 

یہ بجا ہے

کہ برستی ہوئی بارش میں

قوس و قزح

مسکرا اٹھتی ہے

 

یہ بجا ہے

کہ پائیز کے بے رحم ہاتھ

کچھ پھولوں کے دامن کو

نہیں چھو سکتے

 

لیکن یہ بھی سچ ہے

 کہ روح کی گہرائیوں میں

چھپا دکھ

چاند اور سورج کے

چہروں کو دھندلا دیتا ہے

چند لمحوں کے لیے ان کے ابدی  

حسن کوگہنا دیتا ہے

 

ان کے کہنے پر میں نے

مسکراہٹ میں چھپاے ہیں آنسو

لیکن روح کی گہرائیوں میں

چھپے دکھ سے

چہرے پر ابھرتے دھبوں

کا کروں کیا

 

ان آنسووں کا

تتلیوں کے جھلسے پروں کا

موسم پائیز میں

مرجھاے ہوے پھولوں کا

کروں کیا

 

کاش کوئی ان سے کہے

روح کی گہرایوں میں

 چھپے دکھ

چھپانے سے نہیں چھپتے

آنکھ میں آسودہ

آنسووں کے دریا

روکنے سے نہیں رکتے

 

ان کا کہنا ہے

کہ مسکراہٹ میں

چھپا لوں آنسو

 

برکلے، کیلیفورنیا

9 جنوری 2010

 

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.