Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

بلوچوں کے حقوق کا اعلان نامہ

 

کے اشرف

 

حقوق لینے اور دینے

کا کاروبار

کرنے والے

بھول جاتے ہیں

 

حقوق نہ لیے جاتے ہیں

نہ دیے جاتے ہیں

 

ہر انسانی بچہ

اپنے خالق کی طرف سے

حقوق کے ساتھ

پہلی سانس لیتا ہے

اور یہ حقوق

اس وقت تک اس کا

اثاثہ رہتے ہیں

جب تک اس کی پیشانی پر

اس کے پیارے

آخری وداعی بوسہ دے کر

اسے سپرد خاک

نہیں کرتے

 

حقوق لینے اور دینے

کا کاروبار

 کرنے والے

بھول جاتے ہیں

 

انہیں یہ حق کسی نے

نہیں دیا

کہ وہ آزاد انسانوں

کے حقوق

پہلے سلب کریں

اور پھر نسل در نسل

ان پر

مظالم کے پہاڑ

توڑنے کے بعد

اچانک

ایک دن انہیں مژدہ سنایں

کہ آج کا دن

تمہارے لیے

جشن کا دن ہے

کیونکہ

آج

تمہارے سب حقوق

بحال

 کردیے گیے ہیں

 

حقوق لینے اور دینے

کا کاروبار

کرنے والے

بھول جاتے ہیں

 

کہ کسی انسان کا

پابند سلاسل گزرا ایک لمحہ

اس کی روح پر

لگا جاتا ہے ایسے

کاری گھاو

جو کبھی مندمل نہیں ہوتے

چاہے

حقوق لینے اور دینے کے

سینکڑوں فرمان

جاری ہوں

 

حقوق لینے اور دینے

کا کاروبار

کرنے والے

بھول جاتے ہیں

 

حقوق نہ لیے جاتے ہیں

نہ دیے جاتے ہیں

حقوق ہوتے ہیں

جو نہ کوی چھین سکتا ہے

اور نہ دے سکتا ہے

 

برکلے، کیلیفورنیا

24 نومبر 2009

 

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.