Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

اسرار روز و شب

کے اشرف

 

اپنے آپ سے دور

بہت دور

 

روز و شب سے

ان کی داستاں سنتا ہوں

 

تیرگئی شب

مجھ سے سرگوشیوں میں

اپنی تہہ در تہہ

تاریکی کے اسراروں کو

مثل عروس نو

اس طرح

لجاتی ہوئی

کہتی چلی جاتی ہے

کہ ميں سحرزدہ

سحر کے نہ آنے کی

دعا مانگتا ہوں

 

اپنے آپ سے دور

بہت دور

 

روز و شب سے

ان کی داستاں سنتا ہوں

 

میری دعا

آسمانوں سے ناکام

لوٹ آتی ہے

 

دن کا اجالا

مثل موج دریا

میری پلکوں کے ساحل پہ

یوں اترتا ہے

اپنے اسرار کی سیپیوں کے

 سب موتی

میرے دامن میں

الٹ دیتا ہے

 

میں موج در موج

چڑھتے ہوئے دن کے

اسرار کے موتی

 

اپنے دامن میں اٹھاے

ایک خوبرو

نوجواں کی طرح

 

عروس شب نو کی طرف

لوٹ آتا ہوں

 

اپنے آپ سے دور

بہت دور

 

روز وشب سے

ان کی داستاں سنتا ہوں

 

اور چپ رہتا ہوں

 

برکلے، کیلیفورنیا

6 نومبر2009

  

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.