Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

سگہاے آوارہ

کے اشرف

 

سارے میں پھیلی

بارود کی بو

اور انسانی جسموں

کے بکھرے

خون آلودہ اعضا

ویراں گلیاں اور کوچے

اور کوچوں میں پھرتے

سگہاے آوارہ

 

اے رب ارض و سما

یہ منظر

 کیسے منظر ہیں

یہ انساں

 کیسے انساں ہیں

 

یہ کیسے وخشی درندے ہیں؟

 

تیرا جہنم تو

کسی نے نہیں دیکھا

لیکن یہ جہنم کیسا ہے؟

 

جس میں

نہ کوئی وکیل ہے

نہ کوئی منصف ہے

ہے تو بس

 ایک سزاے مسلسل ہے

جس کی

نہ ابتدا ہے

نہ کوئی انتہا ہے

 

بارود کی بو

ویراں گلیاں اور کوچے

سگہا ے آوارہ

اور

انسانوں کے بکھرے

خون آلودہ اعضا

 

اے رب ارض و سما

تو ہی بتا

اس جہنم سے

انساں کب رہا ہوں گے؟

اورکیسے

رہا ہوں گے؟

 

25 اکتوبر 2009  

 برکلے، کیلیفورنیا

 

  

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.