Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

 

آزادی کی خواہش کے سوا

کے اشرف

 

آزادی کی خواہش کے سوا

ہرخواہش ایک پنجرہ ہے

جس کی سلاخوں میں

بند ہو کر

کھودیتا ہے

ہر انساں

وہ جوہر پاک

جو اسے رکھتا ہے

 رواں

از مکاں

 تا مکاں

از زماں

تا زماں

 

خواہشوں کے پنجرے کی

آہنی سلاخیں

چھین لیتی ہیں

انسانوں سے

انسانیت

اور پرندوں سے

آزادی

 

خواہشوں کے

 اس پنجرے میں

ایک خواہش ایسی ہے

جس سے

ٹوٹ جاتے ہیں

سب پنجرے

سب بندھن

 

وہ خواہش ہے

آزادی کی

ہر انساں پر لازم ہے

وہ آزادی کے

امکاں کو

خوف

بھوک

ننگ

افلاس

اور

استحصال سے

آزادی کے

پرچم میں

ڈھالے

 

آزادی کی خواہش

کے سوا

کوئی اور خواہش

مت پالے

 

جسم اور جاں کے

 تعلق سے

ورا

سوچ اور شعور کے

تعلق سے

ورا

گرمی اور سردی کی

شدت سے

ورا

ہونے اور نہ ہونے کے

احساس سے

ورا

ذات کے شعور سے

ورا

چاند اور سورج کی

قلمرو سے باہر

کہکشاوں کے بہاو

سے باہر

وقت اور مکاں کے

امکاں سے

باہر

 

آزادی کی خواہش کا شعلہ

جلاے رکھو

آزادی کا پرچم

اٹھاے رکھو

 

تمہارا یہ نورانی دل

ہمیشہ دھڑکتا رہے گا

 

9 اکتوبر 2009

برکلے، کیلیفورنیا

 

  

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.