Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

 

اب تاریکی سے کوئی نہیں ڈرتا

کے اشرف

 

وہ بھی دن تھے کہ لوگ

تاریکی سے ڈرا کرتے تھے

تب

وردی میں ملبوس

ایک ڈکٹیڑنے بھی

یہی سوچا تھا

کہ لوگ

تاریکی سے ڈرتے ہیں

لیکن اسے معلوم نہ تھا

کہ سب لوگ

تاریکی سے نہیں ڈرتے

کچھ لوگوں کے

ہاتھوں میں

چقماق بھی ہوتا ہے

جس سے شرارے پھوٹتے ہیں

جو تاریکی کے

ہر پیکر کو

جلا کر بھسم کردیتے ہیں

آج وہ ڈکٹیٹرتو

دنیا میں

در بدر پھرتا ہے

لیکن

 افسوس

جواس کی جگہ بیٹھے ہیں

وہ بھی یہی سوچتے ہیں

کہ لوگ تاریکی سے

ڈرتے ہیں

کون سمجھاے ان نادانوں کو

تاریکی

آخر

تاریکی ہے

چقماق کا ایک شرارہ

یا سورج کی ایک کرن

اس کو مٹانے کے لیے

کافی ہے

 انہیں معلوم نہیں

کہ افلا س کے مارے

 کروڑوں لوگ

ہاتھ میں چقماق لیے

سورج کی کرن

ساتھ لیے

ہر سمت سے امڈے چلے آتےہیں

تاریکی کو مٹانے کے لیے

نئی شمعیں جلانے کے لیے

وہ شمعيں

جو بجھا نہیں کرتیں

جو تاریکی سے

ڈرا نہیں کرتیں

22 ستمبر

2009

 

  

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.