Tuesday September 06, 2016

 

 CONTENTS

 Home

 News

 Editorial

 Opinion

 Fauji's Diaries

 Story

 Letters

 Community/Culture

 PW Policy

Ashraf's Articles-1

Ashraf's Articles-2

Ashraf's Urdu Poem

About Us

 
 
 
 

The Life of Jinnah

 

 

آو رقص کریں

کے اشرف

 

آو رقص کریں

چاند بھی ساتھ ہے

سورج بھی ساتھ ہے

 آو ہم رقص کریں

 

دوست بھی ساتھ ہیں

وقت بھی ساتھ ہے

 ساز کی لے بھی ہے

طبلے کی تھاپ بھی ہے

 

جسموں میں مستی بھی ہے

وجد میں ہستی بھی ہے

پھر ہمیں غم کیسا؟

غم کیسا، ڈرکیسا؟

آو ہم رقص کریں

 

رقص کریں

دیوانہ وار

دیوانہ وار، فرزانہ وار

رقص میں ہوایسا جوش

ٹوٹ گریں سب زنجیریں

بدل جایں سب تقدیریں

 

رقص ہو یہ آزادی کا

محبوبوں کی بے حجابی کا

اور لٹیروں کی بربادی کا

 

رقص کریں، گل کھل اٹھیں

آنسوں کی بارش رکے

چہرہ بہ چہرہ مسکراہٹوں کی

قوس و قزاح کھلے

 

آو ہم رقص کریں

چھن چھناں چھن رقص کریں

آوہم رقص کریں

آو ہم رقص کریں

 

24 اگست 2009

 

  

Pakistan Weekly - All Rights Reserved

Site Developed and Hosted By Copyworld Inc.